رنگ حنا

             رنگ حنا

 

“حنا” کانام سنتے ہی ہر لڑکی کی آنکھوں میں جگنو کھل اٹھتے ہیں. لہلہاتی چلمن ، گنگناتا کنگن اور ہلتے لب اس کی ذات کو رنگ دیتے ہیں. وہ لجاتی اور شرماتی اپنے آپ میں ہی کھجلی اور شرم محسوس کرتی ہے. کبھی خود سے ہنسنا، شرمانا اور کبھی خیالوں کی وادی میں چھلانگیں مارنا اس کی عادت بن جاتے ہیں
لیکن ساتھ ہی یہ رنگ کبھی بھی اداس سمندر کی عمیق تر گہرائیوں میں لے جاتا ہے. جہاں اسے اپنا آنگن ، اپنی گڑیاں، اپنی سہیلیاں ہم جولیاں اور سب سے پیارا وجود ماں باپ سے دوری کا غم اداسی دے جاتا ہے. یہ اداسی اس کی خوشی میں ٹھہراؤ پیدا کردیتی ہے. وہ رنگوں میں اپنے رنگ اور اپنے پیارے تلاش کرتی ہے. لیکن ہمیشہ کھو جاتی ہے

پھر اس پر اس کے “پیا “کا” رنگ ” چڑھتا ہے. جو اسے سب سے حسین لگتا ہے. مہندی کی تھال سے ” پیانام ” کی مہندی اس کے چہرے کو گلابی کردیتی ہے. اس کے دل کے تار چھیڑ دیتی ہے. اور وہ دل میں سپنے لئے اپنے ” پیا دیس” چلی جاتی ہے. جہاں پیا کی خوشبو اور اسکا ساتھ اس کی زندگی کی خوبصورتی بن جاتا ہے

مگر کیا کریں؟؟ مہندی یا حنا کا رنگ دائمی نہیں. اس میں پھیکا پن اور مٹ جانے کا اثر بھی ہے. بس یہی اثر زندگی کے رنگوں میں بھی سرایت کرجاتا ہے. وقت کے ساتھ ” پیا” کے نام کی مہندی اترنے لگتی ہے. اور اس کی خوشبو بھی ماند پڑ جاتی ہے. اور آہستہ آہستہ وہ زندگی کے رنگ میں ڈھل جاتی ہے اور “رنگ حنا” مٹ جاتا ہے
20.07.17

Earlene

TRUE PERSON, BLOGGER, WRITER, POET, EXPERT IN PHOTOSHOP AND VIDEO MAKING, GRAPHIC DESIGNER, CREATIVE DESIGNER, BOUTIQUE AND FASHION DESIGNER

Leave a Reply

  • (will not be published)